بدھ کے روز سینیٹ کی امورِ خارجہ کمیٹی کے روبرو اپنی نامزدگی کی توثیق کی سماعت کے دوران، اُنھوں نے اِس بات کی ضرورت کی جانب توجہ دلائی کہ ’’روس کے عزائم کو دیکھتے ہوئے، اُس کے ساتھ کھلے اور برجستہ مکالمے کی ضرورت ہے‘‘، تاکہ امریکہ اپنے راستے کا تعین کر سکے

روس ’’خطرے کا باعث‘‘ ہے: ٹِلرسن

منتخب امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے نامزد وزیر خارجہ ریکس ٹِلرسن نے کہا ہے کہ امریکہ کے لیے روس خطرے کا باعث ہے، ’’اور، اُس کی حالیہ سرگرمیاں امریکی مفادات کو نظرانداز کرنے کی مترادف ہیں‘‘۔

ٹِلرسن نے یہ بات بدھ کے روز سینیٹ کی امورِ خارجہ کمیٹی کے روبرو اپنی نامزدگی کی توثیق کی سماعت کے دوران کہی۔ اُنھوں نے کہا کہ ’’اپنے اقدامات پر روس کا احتساب ہونا چاہیئے‘‘، جیسا کہ، یوکرین پر چڑھائی کا معاملہ ہے۔

ٹِلرسن نے قانون سازوں کو بتایا کہ ’’نیٹو کے ہمارے اتحادی پھر سے سر اٹھانے والے روس سے خوفزدہ ہونے میں حق بجانب ہیں‘‘، اور کہا کہ ٹرمپ نے روس کے ساتھ قریبی تعلقات پر زور دیا ہے ، تاکہ ’’امریکی قیادت کی غیر موجودگی‘‘ کے نتیجے میں، بڑھتی ہوئی روسی سرگرمیوں کا جواب دیا جا سکے۔

اُنھوں نے اِس بات کی ضرورت کی جانب توجہ دلائی کہ ’’روس کے عزائم کو دیکھتے ہوئے، اُس کے ساتھ کھلے اور برجستہ مکالمے کی ضرورت ہے‘‘، تاکہ امریکہ اپنے راستے کا تعین کر سکے۔

ٹِلرسن نے چین کی جانب سے بحیرہٴ جنوبی چین میں جزیرہ تعمیر کرنے کے معاملے پر بھی گفتگو کی۔ اُنھوں نے خطے میں چین کے اِس اقدام کے لیے کہا کہ یہ ’’بین الاقوامی ضابطوں کی پرواہ کیے بغیر، متنازع علاقوں پر قبضہ جمانے‘‘ کے مترادف ہے۔

گذشتہ ماہ، ٹِلرسن کو نامزد کرتے ہوئے، ٹرمپ نے کہا تھا کہ وہ ’ایکسون موبیل کارپوریشن‘ کے سابق چیف اگزیکٹو افسر (سی اِی او) ہیں، جو ’’عالمی امور کا انتظام چلانا جانتے ہیں، جو محکمہٴ خارجہ کو کامیابی سے چلانے کے لیے بہت اہم ہے‘‘۔

منتخب صدر نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر ایک پیغام میں کہا تھا کہ ’’ریکس ٹِلرسن کی جو بات مجھے اچھی لگتی ہے وہ یہ ہے کہ وہ ہر طرح کی غیر ملکی حکومتوں سے کامیابی کے ساتھ معاملات طے کرنے کا وسیع تجربہ رکھتے ہیں‘‘۔

چونسٹھ برس کے ٹِلرسن، ’ایکسون موبیل‘ سے مستعفی ہوچکے ہیں۔ سینیٹ میں اُن کی نامزدگی کی منظوری کے دوران، اُن کے روس کے ساتھ تیل کے شعبے میں ہونے والے سمجھوتے پیچیدگی پیدا کرسکتے ہیں، جہاں متعدد اہم قانون ساز پہلے ہی کہہ چکے ہیں کہ روسی صدر ولادیمیر پیوٹن کے ساتھ اُن کے قریبی تعلقات کے پیشِ نظر، وہ مشکل کا شکار ہیں۔ 2013ء میں ٹِلرسن کو روس کا ’آرڈر آف فرینڈشپ‘ کا ایوارڈ عطا کیا گیا تھا، جو غیر ملکیوں کے لیے مخصوص اعزازی تمغہ ہے۔

متعدد سینیٹر، جن میں جان مکین، جو سنہ 2008میں ری پبلیکن پارٹی کے ناکام صدارتی امیدوار تھے؛ اور مارکو روبیو، جنھوں نے 2016ء میں پارٹی کے صدارتی انتخاب کی پرائمری انتخابی مہم کے دوران اپنا نام واپس لے لیا تھا، شامل ہیں۔ اُنھوں نے کہا ہے کہ اُنھیں ٹِلرسن کے روس اور پیوٹن کے ساتھ تعلقات پر تشویش ہے۔

x

Check Also

ورلڈ کپ فٹ بال: میکسیکو نے جرمنی کو ہرا کر بڑا اپ سیٹ کر دیا

فیفا فٹ بال ورلڈ کپ کے ایک اہم مقابلے میں میکسیکو نے دفاعی چیمپین جرمنی کو صفر کے مقابلے میں ایک گول سے ہرا کر ٹورنمنٹ کا بڑا اپ سیٹ کر دیا ہے۔ میچ کے دوران میکسیکو کی ٹیم نے مسلسل جارحانہ کھیل کا مظاہرہ کیا ۔ میکسیکو کی ٹیم کی خاصیت جوابی حملوں میں اس کے کھلاڑیوں کی چستی اور برق رفتاری تھی۔ میکسیکو کے لوزانو، ہیویئر  ہرنینڈس اور کارلوس ویلا نے انتہائی مربوط انداز میں ایک دوسرے کو پاس دے کر جارحانہ حملے کرنے کا سلسلہ جاری رکھا اور جرمن ٹیم کے مشہور فارورڈ جوشووا کیمیچ کو مکمل طور پر بے اثر کئے رکھا۔ اگرچہ زیادہ وقت بال جرمن کھلاڑیوں کے پاس رہا، تاہم میکسیکو کے کھلاڑیوں نے حاضر دماغی سے چالیں چلتے ہوئے دفاعی چیمپین کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کر دیا اور کھیل کے 35 ویں منٹ میں لوزانو نے گول کر کے میکسیکو کو ایک گول کی برتری دلا دی جو آخر تک قائم رہی۔ آج ایک اور اہم میچ میں سوٹزرلینڈ اور برازیل کے درمیان مقابلہ ایک ایک گول سے برابر رہا۔ میچ سے قبل توقع تھی کہ پانچ بار ورلڈ کپ کی فاتح رہنے والی ٹیم برازیل یہ میچ آسانی سے جیت لے گی۔ لیکن سوٹزرلینڈ نے برازیل کو  مزید گول سکور کرنے  کا موقع نہیں دیا۔ اس میچ کے 20 ویں منٹ میں برازیل کے کھلاڑی فلپ کوٹن ہو نے اپنی ٹیم کو برتری دلا دی جو ہاف ٹائم تک برقرار رہی۔ لیکن کھیل کے 50 ویں منٹ میں سوٹزرلینڈ کے کھلاڑی سٹیون زوبر نے ہیڈ کے ذریعے گول کر کے سکور برابر کر دیا۔ فٹبال ورلڈ کپ کا آغاز جمعرات کے روز ماسکو کے لوژنیکی سٹیڈیم میں ہوا اور پہلے میچ میں میزبان ملک روس کی ٹیم نے سعودی عرب کو صفر کے مقابلے میں 5 گول سے ہرا دیا۔ اگلے روز جمعہ کے دن تین میچ کھیلے گئے۔ یوروگوئے نے مصر کو 1-0 اور ایران نے مراکش کو 1-0 ہی کے سکور سے ہرایا جبکہ سپین اور پرتگال کا میچ 3/3 گول سے برابر رہا۔ کل ہفتے کے روز چار میچ کھیلے گئے۔ فرانس نے آسٹریلیا کے خلاف 2-1 سے فتح حاصل کی، آئس لینڈ اور ارجنٹینا کا میچ ایک ایک گول سے برابر رہا، ڈنمارک نے پیرو کو 1-0 سے شکست دی اور کروئشیا نے نائجیریا کو صفر کے مقابلے 2 گول سے ہرا دیا۔ آج اتوار کے روز بھی تین میچ کھیلے گئے۔ پہلے میچ میں سربیا نے کوسٹا ریکا کے خلاف صفر کے مقابلے میں ایک گول سے کامیابی حاصل کی اور دوسرے میچ میں میکسیکو نے دفاعی چیمپین جرمنی کو 1-0 سے ہرا کر بڑا اپ سیٹ کیا۔ آج کا تیسرا میچ برازیل اور سوٹزرلینڈ کے درمیان  ایک ایک گول سے برابر رہا۔ کل پیر کے روز سویڈن کا مقابلہ جنوبی کوریا سے، بیلجیم کا مقابلہ پاناما سے اور تیونس کا مقابلہ انگلینڈ سے ہو گا۔ ورلڈ کپ کا فائنل 15 جولائی کو کھیلا جائے گا۔  

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow