قومی پالیسی میں بیان کیا گیا ہے کہ تمام جوہری سرگرمیاں پُرامن مقاصد کے دائرے میں رہیں گی، جن حدود کا تعین بین الاقوامی معاہدوں کے تحت کیا گیا ہے

ریاض: سعودی کابینہ کی جوہری توانائی کی قومی پالیسی کی منظوری

سعودی عرب کی کابینہ نے منگل کے روز ایٹمی توانائی کے پروگرام سے متعلق قومی پالیسی کی منظوری دی۔ یہ خبر سرکاری تحویل میں کام کرنے والے خبر رساں ادارے، ’سعودی پریس ایجنسی‘ (ایس پی اے) نے جاری کی ہے۔

قومی پالیسی میں بیان کیا گیا ہے کہ تمام جوہری سرگرمیاں پُرامن مقاصد کے دائرے میں رہیں گی، جن حدود کا تعین بین الاقوامی معاہدوں کے تحت کیا گیا ہے۔

’ایس پی اے‘ کے مطابق، کابینہ نے نیوکلیئر مواد سے حاصل ہونے والے قدرتی وسائل کے کارآمد استعمال کی اہمیت کو اجاگر کیا، ساتھ ہی تابکاری فضلے کے استعمال کے حوالے سے قابل قبول سودمند روایات پر عمل کیا جائے گا۔

سعودی عرب دنیا میں تیل برآمد کرنے والا چوٹی کا ملک ہے۔ وہ تیل کی رسد کو مختلف النوع بنانے کی جستجو کر رہا ہے جب کہ جوہری توانائی کو ضرورت کے لحاظ سے استعمال کرنے کا خواہاں ہے۔

سعودی عرب اِس بات میں دلچسپی رکھتا ہے کہ وہ امریکہ کے ساتھ سولین جوہری تعاون سجھوتا کرے۔ ملک کی جانب سے پہلے ایٹمی توانائی کے پروگرام کو تشکیل دینے میں مدد کے لیے امریکی اداروں کو دعوت دی گئی ہے۔

x

Check Also

پاکستانی کشمیر میں سیاحوں کی آمد اور مشکلات میں اضافہ

محکمہ سیاحت کے حکام کا کہنا ہے جنگ بندی لائن پر کشیدگی کے بعض واقعات کے باوجود کہ گزشتہ برس پاکستانی کشمیر کی سیاحت پر 15 لاکھ سے زیادہ افراد آئے تھے جن میں سے 40 فی صد کی منزل وادی نیلم تھی۔

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow