ڈنڈوت سیمنٹ فیکٹری انتظامیہ کی وجہ سے مزدوروں کو دس سال بعد بھی واجبات کی ادائیگی نہ ہوسکی

ٹوبھہ ( ملک ظہیر اعوان ) ڈنڈوت سیمینٹ فیکٹری انتظامیہ کی ہٹ دھرمی اوربے حسی کی وجہ سے سینکڑوں مزدوروں کو دس سال بعد بھی واجبات کی ادائیگی نہیں ھو سکی ڈنڈوت سیمینٹ فیکٹری سے ریٹائر ھونے والے دوسو پچاس مزدور آج بھی اپنے واجبات کے لیے بے یارومدگار ھیں اور ان کا کوئی پرسان حال نہیں، ساری زندگی مزدور کے لئے جدوجہد کرنے والے مزدور رہنما راجہ کاظم کمال بھی محروم اور بے بس دکھائی دیتے ہیں درجنوں مزدور ان واجبات کی ادائیگی کے انتظار میں موت کی۔وادی میں چلے گئے مگر انتظامیہ ٹس سے مس نہیں ھو رھی سی بی اے خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے اور اس اھم اور بنیادی مسلے پر صرف میٹنگ کی حد تک محدود ہے اور یونین کے پاس بھی اس مسلے کا کوئی حل نہیں فیکٹری انتظامیہ مسلسل نقصان اور خسارے کا رونا رو کر دس سال سے اس اھم مسئلے کو طول دے رھی ھے جب کہ فیکٹری کی پروڈکشن مبینہ طود پر پندرہ سو ٹن یومیہ ھے جس کو آدھے سے زیادہ بتا کر لاکھوں روپے ماھانہ ٹیکس بچایا جارھا ھے جب کہ مزدوروں کے ٹوٹل واجبات بیس کروڑ روپے بنتے ہیں ، اس سلسلے میں فوری اقدامات کیے جائیں سماجی تنظیموں انجمن تاجران سٹی ویلفئر کونسل محبان ویلفئیر کونسل اور تحصیل سنوارومومنٹ نے اس اھم مسئلے پر فوری طور پر حل کرنے کا مطالبہ کیا ہے ۔

x

Check Also

تھانہ سول لائن پولیس کے دبنگ سب انسپکٹر راجہ سرفراز کی کاروائی بدنام زمانہ منشیات فروش خاتون عاصمہ گرفتار

جہلم(عامر کیانی)تھانہ سول لائن پولیس کے دبنگ سب انسپکٹر راجہ سرفراز کی کاروائی بدنام زمانہ ...

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow