پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ امریکی سینٹ کام چیف جنرل جوزف نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کو ٹیلی فون کیا۔ گ

اعلٰی امریکی کمانڈر کا جنرل باجوہ سے رابطہ

پاکستان اور امریکہ نے باہمی تعاون کے تحت دہشتگردی کےخلاف جنگ میں مقاصد کے حصول پر اتفاق کیا ہے۔ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ دہائیوں پر محیط سیکیورٹی تعاون کے باوجود امریکی بیانات سے پاکستانی قوم کو مایوسی ہوئی ہے۔ پوری پاکستانی قوم سمجھتی ہے پاکستان کو دھوکا دیا گیا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ امریکی سینٹ کام چیف جنرل جوزف نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کو ٹیلی فون کیا۔ گزشتہ ہفتے امریکی سینیٹر کی جانب سے بھی آرمی چیف کو ٹیلی فون کیا گیا۔ جنرل جوزف نے کولیشن سپورٹ فنڈ سے متعلق بھی امریکی فیصلے سے آگاہ کیا۔

جنرل جوزف سے گفتگو میں آرمی چیف نے کہا کہ پاکستان مالی امداد کی بحالی کا مطالبہ نہیں کر رہا صرف دہشت گردی کے خلاف جنگ میں اپنے کردار کا احترام اور اعتراف چاہتے ہیں۔ کئی دہائیوں پر محیط سکیورٹی تعاون کے باوجود امریکی بیانات سے پاکستانی قوم کو مایوسی ہوئی ہے۔ پوری پاکستانی قوم سمجھتی ہے حالیہ بیانات سے دھوکا دیا گیا۔ مریکی امداد کے بغیر بھی پاکستان دہشت گردی کے خلاف اپنی کوششیں جاری رکھے گا۔ خطے میں بڑی طاقتوں کی آپس میں جنگ کے باعث پاکستان کو بہت نقصان ہوا۔

آرمی چیف نے کہا کہ پاکستان اپنی سرزمین پر موجود افغان باشندوں کے حوالے سے امریکی خدشات سے بخوبی آگاہ ہے۔ آپریشن ردالفساد کے تحت دہشت گرد عناصر کے خلاف کارروائیاں جاری رکھے ہوئے ہیں تاہم اس مقصد کے لیے افغان پناہ گزینوں کی جلد وطن واپسی انتہائی اہم ہے۔

امریکی جنرل جوزف نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کے کردار کی قدر کرتے ہیں۔ موجودہ صورتحال عارضی مرحلہ ہے۔ امریکہ پاکستان کے اندر کسی یک طرفہ کارروائی کا نہیں سوچ رہا۔ افغانستان کے خلاف پاکستانی سرزمین استعمال کرنے والوں سے نمٹنے میں تعاون چاہتے ہیں۔ امید ہے کہ موجودہ کشیدہ صورتحال کو جلد حل کرلیا جائے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی سرزمین استعمال کرنے والے افغان عناصر کے خلاف کارروائی چاہتے ہیں۔ دہشت گرد عناصر کے خلاف کارروائی نہ ہونا پاکستان کی انسداددہشت گردی کوششوں کی نفی ہے۔

تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان مسائل اور اعتماد کے قفدان کو بات چیت سےحل کیا جاسکتا ہے۔ امریکہ پاکستان کی مدد کے بغیر افغانستان میں کامیابی حاصل نہیں کرسکتا۔ بہتر حکمت عملی کا تقاضا ہے کہ پرائیوٹ طور پر یا اعلیٰ سطح پر بات چیت کی جائے۔

x

Check Also

افغانستان: گذشتہ سال شہری ہلاکتوں میں 9 فی صد کمی آئی

کابل میں اخباری کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے، تنظیم کے سربراہ، تدامچی یاماموتو نے بتایا ہے کہ ’’یہ اعداد بہتر مستقبل کے حصول کی امیدوں پر پانی پھیرنے کا باعث بنتے ہیں‘‘

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow