سرکاری اداروں میں تعینات درجہ چہارم کے ملازمین پس کر رہ گئے

جہلم(چوہدری عابد محمود +سید مظہر عباس)سرکاری اداروں میں تعینات درجہ چہارم کے ملازمین پس کر رہ گئے ، کام چور نوجوانوں کو بھرتی کرکے موجیں کروائی جا رہی ہیں،موجودہ میرٹ نظام اداروں کی تباہی کا سبب بننے لگا۔سرکاری اداروں میں تعینات ملازمین تذبزب کا شکار پرانا نظام بحال کرنے کا مطالبہ ، تفصیلات کے مطابق صوبائی اداروں کے ملازمین نے اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتا یا کہ 5/10 سال قبل میڑک پاس بھرتی ہونے والے ملازمین موجود دور کے بی اے پاس نوجوانوں سے کئی گنا بہتر سرکاری اداروں میں خدمات سر انجام دے رہے ہیں ، موجود حکمرانوں نے میرٹ کا ڈھنڈورا پیٹ کر سرکاری اداروں میں 5/10 سال قبل بھرتی ہونے والے ملازمین کا استحصال شروع کر رکھا ہے چند برس قبل تک سرکاری اداروں میں بھرتی ہونے والے ملازمین کے محکمانہ امتحان ہوا کرتے تھے اس طرح درجہ چہارم کی آسامیوں پربھرتی ہونے والے محنتی جفا کش ، فرض شناس ، ایماندار اہلکار امتحان پاس کرنے کے بعد اعلیٰ عہدوں کے لئے منتخب ہو جاتے اور سرکاری اداروں کی بہتری کے لئے ہمہ وقت کوشاں رہتے موجودہ حکمرانوں نے محکمانہ ترقیاں امتحان ختم کرکے پڑھے لکھے نوجوانوں کا استحصال شروع کر رکھا ہے جن نوجوانوں کو گریجویٹ کے طور پر بھرتی کرکے کلریکل آفس سپرٹنڈنٹ سمیت دیگر عہدوں کیلئے بھرتی کیا جارہاہے وہ سرکاری محکموں کی الف ب سے بھی ناآشنا ہیں صوبائی اداروں کے ملازمین نے پنجاب کے حکمرانوں سے مطالبہ کیاہے کہ پرانے نظام کو بحال کیا جائے تاکہ درجہ چہارم کی آسامیوں پر بھرتی ہونے والے فرض شناس، محنتی نوجوان ترقی کی راہ پر گامزن ہو کر والدین اور بیوی بچوں کی اعلیٰ طریقے سے پرورش کر سکیں ۔ انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ جو لوگ 10 سال قبل سرکاری اداروں میں بھرتی ہوئے انہیں آج انہیں رات دن ذلیل وخوار کیا جارہاہے اہم آسامیوں پر درجہ چہارم کے ملازمین خدمات سر انجام دے رہے ہیں جبکہ نئے بھرتی ہونے والے نوجوان ماسوائے گپیں ہانکنے کے کسی قسم کی کارکردگی دکھانے کے قابل نہیں ۔

x

Check Also

عبدالغفار قیصرانی ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر جہلم کی ہدایت عادی مجرمان کے خلاف کارروائی

جہلم(چوہدری عابد محمود +افتخار الحق)عبدالغفار قیصرانی ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر جہلم کی ہدایت عادی مجرمان کے ...

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow