سلمان صوفی نے بتایا ہے کہ ان عورتوں کے معاملات کو حل کرنے والا عملہ بھی خواتین پر مشتمل ہے اور قانونی، طبی اور نفسیاتی مسائل ایک ہی چھت تلے حل کئے جاتے ہیں؛ حتیٰ کہ پولیس رپورٹ کا اندراج بھی یہیں کر دیا جاتا ہے اور انہیں تھانے جانے کی ضرورت نہیں ہوتی

تشدد کی شکار خواتین کی داد رسی، سلمان صوفی کے لیے عالمی اعزاز

دنیا کے بہت سے ملکوں کے ساتھ ساتھ پاکستان میں لاتعداد خواتین کو شدید نوعیت کے تشدد کا سامنا رہتا ہے؛ جنھیں اکثر معاشرے میں بنیادی سہولتوں سے محروم رکھا جاتا ہے، اور بڑی حد تک نظرانداز کر دیا جاتا ہے۔

’وائلینس اگینسٹ وومین‘ ایک ایسی تنظیم ہے جس نے اس حوالے سے پاکستان بھر میں عورتوں کیلئے بھرپور کام کیا ہے۔ اس تنظیم کے روح رواں صوبہٴ پنجاب کے وزیر اعلیٰ کے ’اسٹریٹجک ریفارمز یونٹ‘ کے سربراہ سلمان صوفی ہیں جنہیں امریکہ کے سابق نائب صدر جو بائیڈن اور اقوام متحدہ کے سیکٹری جنرل اینٹونیو گوٹیرس کے ہمراہ عورتوں کے خلاف ہونے والے تشدد کو روکنے کیلئے نمایاں کارکردگی کے اعتراف میں Voices of Solidarity Award 2017 سے نوازا گیا ہے۔ اس اعزاز کے لئے دنیا بھر میں صرف پانچ افراد کا انتخاب کیا گیا تھا۔

سلمان صوفی ’وائس آف امریکہ‘ کے سٹوڈیوز میں تشریف لائے اور اردو سروس کی بہجت جیلانی کے ساتھ اپنے کام کے بارے میں تفصیلی بات چیت کی۔ اپنے اس ادارے کی خصوصیت بتاتے ہوئے سلمان صوفی کا کہنا تھا کہ یہ اپنی نوعیت کا پہلا ادارہ ہے جہاں بد سلوکی اور تشدد کی شکار خواتین کی بہترین انداز میں داد رسی کی جاتی ہے۔

سلمان صوفی خواتین کے خلاف تشدد کو ختم کرنے کے لئے پاکستان کی کوششوں کو عالمی سطح پر متعارف کرانے میں مصروف ہیں۔ انہوں نے ہاورڈ یونیورسٹی جیسے بڑے تعلیمی اداروں میں اپنے پروگراموں کے بارے میں بات کی۔ وہ کہتے ہیں کہ ان کے یونٹ کے تحت 30 منصوبوں پر کام ہو رہا ہے۔ انتہائی مسائل کا شکار خواتین کے لئے ان کے ان مراکز میں ایک ہی جگہ متعدد سہولتیں فراہم کی جاتی ہیں۔

سلمان صوفی کہتے ہیں کہ ان عورتوں کے معاملات کو حل کرنے والا عملہ بھی خواتین پر مشتمل ہے اور قانونی، طبی اور نفسیاتی مسائل ایک ہی چھت تلے حل کئے جاتے ہیں؛ حتیٰ کہ پولیس رپورٹ کا اندراج بھی یہیں کر دیا جاتا ہے اور انہیں تھانے جانے کی ضرورت نہیں ہوتی۔

کسی بھی نوعیت کی صورتحال کو تبدیل کرنے کے لئے ’مائنڈ سیٹ‘ یا پھر ذہنی رجحان کو بدلنے کی ضرورت ہوتی ہے۔ ہمارے اس سوال کے جواب میں کہ خواتین کے خلاف اس منفی رویئے کو بدلنے کے لئے ان کے ادارے کی طرف سے کیا جا رہا ہے تو سلمان صوفی نے بتایا کہ اس ضمن میں سکول کی سطح پر نصاب میں ممتاز اور مشہور خواتین کی شخصیت اور اوصاف کے بارے میں مواد شامل کیا گیا ہے، تاکہ بچپن سے عورت کے بارے میں ایک مثبت تصور کو متعارف کرایا جائے۔

سلمان صوفی کا کہنا تھا کہ وہ اپنے اس ماڈل کو پورے پاکستان کے علاوہ عالمی سطح پر بھی فروغ دینے کا عزم رکھتے ہیں۔ انہوں نے یونیورسٹی آف شکاگو لا سکول میں انٹرنیشنل ہیومن رائٹس کلینک کے ساتھ بھی کام کیا ہے، تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جا سکے کہ ان مراکز میں بین الاقوامی معیار اور ضابطوں کے مطابق کام ہو سکے۔

’وائس آف امریکہ‘ اُردو سروس نے سلمان صوفی سے اس بارے میں خصوصی انٹرویو کیا۔ آئیے اس انٹرویو کےکچھ اقتباسات سنتے ہیں:

Leave a Reply

x

Check Also

آج رات آسمان پر روشنیوں کی بارش ہو گی

اگر آپ دنیا کے شمالی حصے میں ہیں تو آپ کے لیے خوش خبری یہ ہے کہ آج یعنی بدھ کی رات کی آپ آسمان پر دم دار ستاروں کے جھرمٹ اور دل لکش روشنیوں کی چمک دمک کا نظارہ کر سکتے ہیں۔ یہ خوبصورت منظر دیکھنے کے لیے آپ کو کسی دور بین کی بھی ضرورت نہیں ہے۔ آپ اپنے کمرے کی کھڑکی سے بھی اس خوبصورت منظر کا لطف اٹھا سکتے ہیں ۔ بس شرط یہ ہے کہ آسمان صاف ہو اور اس پر بادل نہ ہوں۔ یہ خوبصورت منظر ان لوگوں کے لیے ایک شاندار موقع ہے آسمان پر ٹوٹتے ستارے کو دیکھ کر دعا مانگتے ہیں۔ کیونکہ انہیں تقریباً ہر ایک منٹ کے بعد آسمان پر ٹوٹتے ہوئے ستارے نظر آئیں گے اور ان کی چکاچوند آنکھوں کو خیرہ کر دے گی۔ اگر آسمان صاف اور تاریک ہو۔ اردگرد بھی روشنی کم ہو تو کبھی کبھار آسمان سے روشنی کی ایک چمکدار لکیر تیزی سے زمین کی جانب بڑھتی اور اچانک غائب ہوتی ہوئی  نظر آتی ہے ، لیکن ایسا کم  ہی ہوتا ہے کہ روشنیوں کا مینہ برسنا شروع ہو جائے ۔ بدھ کی رات ایک ایسی ہی خاص رات ہے۔ آئرلینڈ کے فلکیاتی ماہرین کی تنظیم نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ دم دار ستاروں کی بارش ایک ایسے موقع پر ہو رہی ہے جب آسمان پر چاند بھی نہیں ہوگا اس لیے یہ اس سال کا بہترین نظارہ ہوگا۔ کبھی آپ نے غور کیا کہ یہ دم دار ستارے کیا ہوتے ہیں۔ اور ان میں اتنی روشنی اور چمک کہاں سے آتی ہے اور پھر وہ اچانک نظروں سے اوجھل ہو کر کہا ں چلے جاتے ہیں۔ اس سوال کا جواب بہت دلچسپ ہے۔ سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ جنہیں آپ دم دار ستارہ کہتے ہیں، وہ سرے سے ستارا ہوتے ہی نہیں بلکہ وہ شہاب ثاقب ہوتے ہیں ۔ انہیں شہابیئے بھی کہا جاتا ہے۔ شہاب  ثاقت  خلا میں بھٹکتے ہوئے چٹانی ٹکڑے ہیں ۔ یہ ٹکڑے اسی مواد سے بنے ہیں جس سے كائنات کے دوسرے اجرام فلکی بنے ہیں۔ یہ ستاروں کے آپس میں ٹکرانے، یا تباہ ہو جانے کے بعد اپنے مرکز سے بچھڑ کر خلا میں بھٹکنے لگتے ہیں اور جب وہ کسی سیارے کے قریب سے گذرتے ہیں تو اس کی کشش انہیں اپنی جانب کھینچ لیتی ہے۔ ​ سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ زمین کے گرد ہوا کا ایک خلاف موجود ہے۔ یہ خلاف زمین پر زندگی کا سب سے بڑا محافظ ہے۔ جب کسی شہاب ثاقب کو زمین کی کشش ثقل اپنی جانب کھینچتی ہے تو ہوا کی  رگڑ سے اس میں آگ لگ جاتی ہے اور وہ زمین پر پہنچنے سے پہلے ہی راکھ کا ڈھیر بن جاتا ہے ۔  اگر وہ تیز رفتار گولہ زمین سے ٹکرا جائے تو ہولناک تباہی لا سکتا ہے۔ جب ہمیں کوئی دم دار ستارہ تیزی سے زمین کی جانب بڑھتا اور غائب ہوتا ہوا نظر آتا ہے تو دراصل اس وقت وہ زمین کے کرہ ہوائی میں جل رہا ہوتا ہے۔ سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ شہابیوں کی اشکال مختلف ہوتی ہیں اور ان میں شامل عناصر اور اجزأ بھی اور سائز بھی مختلف ہوتے ہیں۔ جن شہابیوں کا قطر تین میل یا اس سے زیادہ ہو انہیں فلکیات کی زبان میں فائی تھون کہا جاتا ہے۔ امریکی خلائی ادارے ناسا کے ایک سائنس دان بل کک کا کہنا ہے کہ فائی تھون یا تو  کرہ ارض کے قریب خلا میں تیر  رہے ہیں یا وہ  کہکشاں کے کسی حصے سے بھٹکتے ہوئے زمین کے قریب آ جا تے ہیں۔     فلکیاتی ماہرین کے مطابق اس سال لوگوں کو دم دار ستاروں کی چمک دمک دیکھنے کا ایک اور موقع بھی ملے گا۔ آسمان کو روشنیوں سے نہلانے والی آج کی بارش کے تین دن بعد دم دار ستاروں کا ایک اور جھرمٹ زمین کے قریب سے گذرے گا۔ لیکن اس کا زمین سے ان کا فاصلہ تقریباً 64 لاکھ میل ہوگا۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ بدھ کی ر ات دم دار ستاروں کی بارش سے زمین کو کوئی خطر ہ نہیں ہے، لیکن وہ یہ بھی کہتے ہیں کہ مستقبل میں ایسا بدقسمت لمحہ آسکتا ہے جب کوئی فائی تھون زمین کے مدار میں داخل ہو جائے اور  میلوں بڑے سائز کی اس چٹان کو  زمین کا کرہ ہوائی اسے پوری طرح جلا نہ پائے ، تو پھر جب جلتا ہوا اور آگ اگلتا ہوا فائی تھون زمین سے ٹکرا ئے گا تو ایک قیامت کا منظر ہوگا اور لاکھوں افراد آناً فاناً ہلاک ہو جائیں گے۔ بدھ کی رات دم دار ستاروں کی بارش کا نظارہ آپ دنیا کے کسی بھی حصے سے دیکھ سکتے ہیں، بس شرط یہ ہے کہ آسمان صاف ہو۔

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow